سکولز سسٹم گلشن انور واہ کینٹ میں سیرت النبیﷺ کانفرنس کا انعقاد رپورٹ: مختاراجمل بھٹی

citytv.pk

 

ربیع الاول شریف کا مبارک و بابرکت مہینہ گزر رہا ہے اس برکتوں والے مہینے میں تاجدارمدینہ،سرور کونین،حضرت محمد مصطفی ﷺکی ولادت باسعادت ہوئی،فضا میں درودسلام کی صدائیں گونج رہی ہیں جبکہ گلی محلوں،گاؤں اورشہروں میں آقا ئے نامدار،وجہ تخلیق کائنات،دوعالم کے تاجدار،محبوب کبریا،نبی محتشم،حضرت محمدﷺ کے میلاد کی محافل،ریلیاں،سیرت کانفرنسیں اور رحمت اللعالمین سیمینارز کا انعقاد کیا جارہا ہے اسی طرح کی ایک سیرت النبی ﷺکانفرنس ملک مدثر اقبال کی میزبانی میں IV سکولز سسٹم گلشن انور واہ کینٹ میں بھی منعقد کی گئی

 

جس میں صدرحلقہ سخن پوٹھوہارراجہ اعجاز گوہر، ملک محمدپرویزسابق سٹی ناظم ٹیکسلا، سابق وائس پریذیڈنٹ واہ کینٹ امجد کاشمیری،سوشل میڈیا ہیڈمسلم لیگ ن ٹیکسلاملک عبدالسلام،پروفیسر ہمایوں خان، پروفیسر زاہد بٹ، بینک منیجر مشتاق خان،شیخ ابراہیم مسعود،ملک محمد امین،راجہ نثار،دلاور خان اور ملک شوکت سمیت واہ کینٹ،ٹیکسلا،حسن ابدال اورراولپنڈی اسلام آبادکی معروف تعلیمی،سماجی،سیاسی و مذہبی شخصیات نے شرکت کی سیرت کانفرنس کی صدارت معروف معالج، سماجی شخصیت و ڈائریکٹر السید ہسپتال احاطہ ٹیکسلا ڈاکٹر سید اسد علی نے کی جبکہ مہمان خصوصی مصنف،کالم نگار سیاح وسابق ڈائریکٹر پی او ایف سپورٹس ڈائریکٹوریٹ واہ کینٹ محمد توفیق تھے

 

نظامت کے فرائض نامور ماہرتعلیم،علمی و ادبی اورسماجی شخصیت عطاء الرحمن چودھری نے انجام دیے تقریب کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام سے کیاگیا ملک کے نامور اور انٹرنیشنل ایوارڈ یافتہ قاری محمد امین مجددی نے اپنی خوبصورت آواز اور لہجے میں تلاوت کلام پاک کی اور بعد میں نعت رسول مقبول ﷺ کی سعادت بھی حاصل کی اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے علمی وادبی شخصیت،معروف اسلامی سکالر سید عطاء اللہ شاہ ہاشمی نے کہا کہ اللہ تعالیٰ نے انسانیت کو جہالت وگمراہی کے اندھیروں سے نکالنے کے لیے اپنامحبوب رسول ﷺ بھیجا جوکہ انہیں قرآن مجیدکی آیات پڑھ کر سناتا ہے ان کا تزکیہ کرتا ہے اور انہیں کتاب و حکمت کی تعلیم دیتاہے ممتازماہرتعلیم سردار شفیق خان کا کہنا تھاکہ دنیا کے نامور لوگوں نے رسول مکرم ﷺکی تعریف و توصیف کی مگرکوئی بھی ان کے جمالات کوکمالات کااحاطہ نہیں کر سکاکیونکہ اللہ تبارک و تعالیٰ نے اپنے حبیب ﷺکے مقام و مرتبہ کو بلند وبرتر فرمادیاہے

akhtarsardar.com

علمی و سماجی شخصیت کیپٹن)ر(عمر فاروق نے کہا کہ حضوراکرم ﷺایک بہترین مصلح تھے جنہوں نے دنیا کے تمام ضابطوں،قواعداور تاریخ کو بدل کر رکھ دیایہی وجہ ہے کہ انگریز مصنف مائیکل ہارٹ نے اپنی کتاب” دنیا کے سو عظیم انسان “میں انہیں سب سے پہلے نمبرپر لکھا ہے اشفاق ہاشمی کا کہنا تھاکہ علامہ اقبال نے حضرت ابراہیم ؑ کے ایماں اور انداز گلستاں کی جوبات کی تھی ہمارا المیہ یہ ہے کہ وہ ایمان اور اندازگلستان ہم سے دور چلاگیااور جس تزکیہ کی تعلیم دی گئی وہ یہ ہے کہ نبی کریم ﷺ نے تمام عالم پر رحم،شفقت اور مہربانی فرمائی ہے کیونکہ آپ ﷺ کو تمام عالمین کے لیے رحمت بناکر مبعو ث فرمایا گیا

 

ماہر تعلیم ابرار احمد خان نے کہا کہ ہم نے منہاج رسول اور پیغمبر اسلامﷺ کی تعلیمات کو چھوڑ دیا ہے اس لیے ذلت و رسوائی ہمارا مقدر بن چکی ہے جن ہستیوں کے نام پر ہمیں جڑنا تھاہم ایک دوسرے کو ادھیڑنے اور نوچنے میں لگے ہوئے ہیں معاشرے میں عدم برداشت عروج پر ہے ہمیں پھر سے نبی پاک ﷺ کی تعلیمات کو اپنانا ہو گا تبھی معاشرہ میں امن وسکون کی فضا قائم ہوسکے گی پروفیسر محمود اعجاز بٹ کا کہنا تھاکہ آج کی اس محفل نے مدینہ میں صفہ کے چبوترے کی یاد دلادی ہے کہ جس طرح صفہ کے چبوترہ میں وعظ و نصیحت اور تعلیم و تربیت کااہتمام کیاجاتاتھا اسی طرح IV سکولز نے بھی اس روایت کو زندہ کیا ہے

 

مہمان خصوصی محمدتوفیق مصنف،کالم نگار سیاح وسابق ڈائریکٹر پی او ایف سپورٹس ڈائریکٹوریٹ واہ کینٹ نے کہا کہ سرور انبیاء ﷺ کی زندگی کو اگر دوالفاظ میں بیان کیا جائے تووہ ہے حسن کلام اور حسن طعام اور جو لوگ اللہ اور رسول کریم ﷺ کے حوالے سے حسن کلام اور حسن طعام کی محافل منعقد کرتے ہیں وہ مبارکباد کے مستحق ہیں صدر تقریب معروف معالج، سماجی شخصیت و ڈائریکٹر السید ہسپتال احاطہ ٹیکسلا ڈاکٹر سید اسد علی کاکہنا تھاکہ نبی اکرم ﷺ سے محبت ہمارے ایمان کا حصہ ہے اور ہمارا ایمان اس وقت تک کامل نہیں ہوسکتا جب تک ہم رسول اکرم ﷺ کو اپنے والدین،مال،

 

اولاد حتیٰ کی اپنی جان سے بھی زیادہ عزیز نہ رکھیں اوریہی مودت ہے جوکہ حضرت اویس قرنی نے حضوراکرم ﷺ سے کی اور پھر دنیانے دیکھا کہ رسول محتشم ﷺ نے انہیں انعام میں اپنا مبار ک کرتہ عطا فرمایا، مولانا عطا اللہ ہاشمی نے اختتامی دعا کروائی۔

 

اپنی رائے کا اظہار کریں