بھارت جنوبی ایشیا میں’’دہشتگردی کی ماں‘‘ اقوام متحدہ جنگی جرائم کا نوٹس لے: پاکستان

اسلا م آبا د (خصوصی نامہ نگار) اقوام متحدہ میں پاکستان کے مستقل مندوب، سفیر منیر اکرم نے مسلح تنازعات میں شہریوں کا تحفظ، پر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں کہا ہے کہ 21 جنوری 1989 کو بھارتی قابض افواج نے سری نگر میں بدنام زمانہ گاؤ کدل قتل عام میں 52 کشمیری شہریوں کو شہید کیا۔ اب تک وہ 96,000 کشمیریوں کو قتل کر چکے ہیں جبکہ تقریباً 23,000 خواتین بیوہ ہوئیں۔ تفصیلات کے مطا بق سفیر منر اکرم نے میں مسلح تصادم میں شہریوں کا تحفظ: شہروں میں جنگ – شہری ماحول میں شہریوں کا تحفظ” کے موضوع پر اہم اعلیٰ سطحی مباحثے کے انعقاد کے لیے ناروے کے مستقل مشن اور سیکرٹری جنرل، انٹرنیشنل کمیٹی آف ریڈ کراس (ICRC) کے صدر اور دیگر پینلسٹس کا بھی بصیرت انگیز بریفنگ کے لیے شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ عام شہری ہمیشہ سے جنگ کا سب سے بڑا شکار رہے ہیں۔ بھارتی مظالم سے  تقریباً 23,000  کشمیری خواتین بیوہ ہوئیں۔ 11250 سے زائد خواتین اور لڑکیوں کی عصمت دری اور سکولوں اور گھروں سمیت 100,000 سے زیادہ مکانات کو تباہ کر دیا۔ 5 اگست 2019 سے، 900,000 ہندوستانی فوجی IIOJK میں تعینات ہیں۔ ہر شہر، قصبے، گاؤں میں اس بات کو مسلط کرنے کے لیے جسے ہندوستان کے رہنما خود بخود جموں اور کشمیر کے لیے “حتمی حل” قرار دیتے ہیں۔ انہوں نے معصوم کشمیری نوجوانوں کو ماورائے عدالت قتل کرنے کے لیے “کورڈن اینڈ سرچ” آپریشنز اور جعلی “مقابلوں” کا سہارا لیا ہے۔ پورے کشمیری محلوں، شہری مراکز اور دیہاتوں کو تباہ اور جلانے کے لیے اجتماعی سزائیں دیں۔ شہری مظاہرین کے خلاف زندہ گولہ بارود کا استعمال کیا، جس میں “پیلٹ گن” بھی شامل ہے جس نے سینکڑوں کشمیری بچوں کو اندھا کر دیا ہے۔ 13,000 نوجوان کشمیری لڑکوں کو من مانی طور پر حراست میں لیا گیا، جن میں سے اکثر کو تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ اور مقبوضہ کشمیر کی آبادی کو مسلم اکثریتی ریاست سے ہندو اکثریتی علاقے میں تبدیل کرنے کے عمل میں ہیں۔ ہم سلامتی کونسل سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ان جرائم کے زبردست ثبوتوں کا نوٹس لے اور ایسے جرائم اور IHL کی سنگین خلاف ورزیوں کے ذمہ دار ہندوستانی اہلکاروں اور اہلکاروں کو جوابدہ ٹھہرائے۔ ہندوستان دہشت گردی کا شکار نہیں ہے۔ یہ جنوبی ایشیا میں دہشت گردی کی ماں ہے۔ یہ پاکستان ہی ہے جس نے 2014 سے انسداد دہشت گردی کی کارروائیوں سے ہماری سرزمین کو دہشت گرد گروپوں سے پاک کر دیا ہے۔

اپنی رائے کا اظہار کریں