اوورسیزپاکستانیوں کے ووٹ کا حق ختم نہیں کیا گیا، اعظم نذیر تارڑ

اعظم نذیر تارڑ نے کہا ہے کہ اوورسیزپاکستانیوں کے ووٹ کا حق ختم نہیں کیا گیا۔

وزیرقانو ن اعظم نذیر تارڑ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ نیب نے سیاست میں بھر پور کردار ادا کیا، بیوروکریٹس نیب کی وجہ سے کام نہیں کرتے تھے۔

انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے کہا فوری انتخابات ای وی ایم سے ممکن نہیں، الیکشن کمیشن نے کہا مشین پرالیکشن چاہتے ہیں تو درجہ بدرجہ کریں، الیکشن کمیشن جس انتخاب میں چاہے ای وی ایم استعمال کرسکتا ہے۔

اعظم نذیر تارڑ نے کہا ہے کہ 90 روز کا ریمانڈ دہشتگردوں کیلئے تھا، وائٹ کالر کرائم میں کہیں بھی90روز کا ریمانڈ نہیں، چوری کے کیسزمیں14روز کا ریمانڈ کیا گیا، نیب قوانین کوسیاسی مخالفین کیلئے استعمال کیا جاتا رہا۔

  وزیرقانون نے کہا کہ الیکشن کمیشن کے مطابق ایک سال میں الیکٹرانک ووٹنگ ممکن نہیں، ضمنی الیکشن میں اوورسیز ووٹنگ کیلئے پائلٹ پروجیکٹ نہیں کیا گیا، اوورسیزپاکستانیوں کو اسمبلی میں نمائندگی دینے کی تجویز زیرغور ہے۔

Advertisement

انہوں نے کہا کہ اتحادیوں کی تجویز ہے اوورسیز کو اسمبلی کی رکنیت دی جائے، ای وی ایم کے استعمال کا معاملہ الیکشن کمیشن پرچھوڑا ہے، کمیٹی نے کثرت رائے سے الیکشن اصلاحات کومسترد کیا تھا۔

اعظم نذیر تارڑ نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن نے انتخابی اصلاحات پر34اعتراض عائد کیے تھے، الیکٹرانک ووٹنگ کیلئے وقت درکار ہے، اوورسیز پاکستانیوں کا ملکی ترقی میں اہم کردار ہے۔

 وزیرقانون نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی نے انٹرنیٹ ووٹنگ سے اوورسیزپاکستانیوں کو ووٹ کا حق دیا، پی ٹی آئی نے بہت عجلت میں اس بل کو منظور کیا تھا، الیکشن کروانا اور اس کا طریقہ کار وضع کرنا الیکشن کمیشن کا اختیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیب قانون میں ترامیم کی گئیں، نیب قانون کا بے دریغ استعمال کیا گیا، 2017 کی قانون سازی میں کسی جماعت کی مخالفت نہیں تھی، پی ٹی آئی نے23بلز کے درمیان یہ بل بھی منظورکرایا۔

اعظم نذیر تارڑ نے کہا کہ اوورسیزپاکستانیوں کے ووٹ کا حق ختم نہیں کیا گیا، اوورسیزپاکستانی ہماراقیمتی اثاثہ ہیں، 2021 میں پی ٹی آئی نے یہ بل متعارف کرایا، قومی اسمبلی میں اس بل کو بلڈوز کر کے پاس کروایا گیا تھا۔

اپنی رائے کا اظہار کریں