اسلام آباد پولیس نے شاہ محمود قریشی کو کسان اتحاد دھرنے میں جانے سے روک دیا

اسلام آباد پولیس نے پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما و سابق وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو کسان اتحاد دھرنے میں جانے سے روک دیا۔

تفصیلات کے مطابق شاہ محمود قریشی کی گاڑی کو پولیس نے حصار میں لے لیا۔

شاہ محمود قریشی نے اس موقعے پر کہا کہ مجھے اریسٹ کرنا چاہتے ہیں تو اریسٹ کر لیں، ڈی آئی جی کو بلائیں آپ خواہ مخواہ ایشو بنا رہے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ میں خود کاشت کار ہوں، کسانوں سے اظہار یکجہتی کے لیے جا رہا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ پولیس نے مجھے راستہ میں روکا ہوا ہے، پولیس والے چھوٹے اہلکار ہیں، ادھر نہ ڈی آئی جی اور نہ ڈی سی نظر آرہا ہے۔

Advertisement

شاہ محمود نے کہا کہ حکومت بوکھلاہٹ کا شکار ہو چکی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ کسان اپنا مسئلہ لے کر آئے ہیں جو پورے پاکستان کا ایشو ہے۔

شاہ محمود قریشی پیدل ایف نائن پارک مہران گیٹ کی طرف روانہ ہو گئے۔

دوسری جانب اسلام آباد پولیس نے اپنا موقف سامنے رکھا ہے کہ شاہ محمود قریشی کسان اتحاد کے احتجاج کا حصہ نہیں تھے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے پولیس کے کام میں رکاوٹ بننے کی کوشش کی، پولیس افسران نے ان کے دھمکی آمیز ریمارکس کو صبر و تحمل سے سنا۔

اسلام آباد پولیس کا کہنا ہے کہ اسلام آباد کیپیٹل پولیس اپنے فرائض منصبی بغیر کسی حیل و حجت کے اور بلا تفریق جاری رکھے گی، صبر و تحمل اور قانون کی پاسداری پولیس کی تربیت کے اہم اجزاء ہیں۔

Advertisement

واضح رہے کہ مہنگی بجلی و کھاد کے باعث پاکستان کسان اتحاد کا احتجاجی دھرنا دن بھر سے ایف نائن پارک میں جاری ہے۔

 

 

 

Advertisement

اپنی رائے کا اظہار کریں