تھائی رائیڈ کے مریضوں کو کیا کھانا چاہیے اور کیا نہیں؟ جانئیے

تھائی رائیڈ کی بیماری سے نجات کے لیے آپ کو اپنے کھانے پینے کا خاص خیال رکھنا ہوگا۔

آئیے آپ کو بتاتے ہیں کہ تھائی رائیڈ سے نجات کے لیے آپ کو کن غذاؤں کا استعمال کرنا چاہیے اور کن چیزوں سے پرہیز کرنا چاہیے۔

تھائی رائیڈ میں کون سی چیزیں کھائیں:

آپ انڈے کھا سکتے ہیں۔ انڈے کے پیلے حصے میں آئیوڈین اور سیلینیم جبکہ سفید حصے میں پروٹین وافر مقدار میں پایا جاتا ہے۔

آپ ہر قسم کا گوشت کھا سکتے ہیں جیسے چکن، گائے کا گوشت وغیرہ ۔

Advertisement

آپ مچھلی بھی کھا سکتے ہیں۔ آپ سمندری مچھلی جیسے سالمن، ٹونا، جھینگا کھا سکتے ہیں۔

آپ سبزیاں بھی کھا سکتے ہیں۔ آپ ہائی پروٹین والی سبزیاں کھا سکتے ہیں۔

آپ اپنی خوراک میں جامن، کیلا، اورنج، امرود جیسے پھل شامل کر سکتے ہیں۔

اس کے علاوہ آپ کوئنو، چیا سیڈز، سورج مکھی کے بیج کھا سکتے ہیں۔

آپ دودھ کی مصنوعات بھی کھا سکتے ہیں۔ مثلاً دودھ، پنیر، دہی جیسی غذائیں خوراک میں شامل کی جا سکتی ہیں۔

ان کھانوں سے پرہیز کریں:

Advertisement

پروسیسڈ فوڈ:

تھائی رائیڈ کے مریضوں کو انتہائی پراسیس شدہ کھانے سے پرہیز کرنا چاہیے۔ پروسیسڈ فوڈ میں بہت زیادہ کیلوریز ہوتی ہیں۔ بہت زیادہ کیلوریز آپ کے لیے خراب ہو سکتی ہیں۔

جنک فوڈ :

جنک فوڈ کا استعمال بھی نہیں کرنا چاہیے۔ اس کے علاوہ زیادہ پراسیسڈ فوڈ جیسے ہاٹ ڈاگ، کیک، کوکیز کا استعمال نہیں کرنا چاہیے۔

پروسیسڈ فوڈ میں سوڈیم زیادہ ہوتا ہے۔ اس کا زیادہ استعمال تھائرائیڈ کے مریضوں پر مضر اثرات مرتب کرتا ہے۔

گلوٹین فوڈز:

Advertisement

تھائرائیڈ کے مریضوں کو بھی گلوٹین کی مقدار کم کرنی چاہیے۔ گلوٹین سے بنی غذائیں جیسے کہ گندم، جو اور رائی کو بھی نہیں کھانا چاہیے۔

بروکولی اور گوبھی تھائی رائیڈ کے مریضوں کو کچی یا کم پکی سبز پتوں والی سبزیوں سے بھی پرہیز کرنا چاہیے۔

ان میں اور خصوصیات ہیں، جو تھائیرائڈ کے مریضوں کے لیے نقصان دہ ہو سکتی ہیں۔

میٹھے کا استعمال:

آپ کو بہت زیادہ چینی استعمال نہیں کرنی چاہئے۔ ذیابیطس آپ کے ہاضمہ کو متاثر کر سکتی ہے۔ اس سے آپ کا وزن بھی بڑھ سکتا ہے۔ اس کے علاوہ شوگر آپ کے تھائی رائیڈ گلینڈ کی سطح کو بھی کنٹرول کر سکتی ہے۔

سویا بین:

Advertisement

آپ کو سویابین یا سویا پر مشتمل کھانے کا استعمال بھی نہیں کرنا چاہیے۔ یہ تھائی رائڈ کا خطرہ بھی بڑھا سکتا ہے۔

سویابین میں پائے جانے والے فائٹوسٹروجن انزائمز کے کام کو بھی متاثر کر سکتے ہیں جو تھائی رائڈ ہارمونز پیدا کرتے ہیں۔

Advertisement

اپنی رائے کا اظہار کریں