ایک اور قدرتی آفت، غذائی قلت سیلاب سے زیادہ مہلک، اقوام متحدہ نے خبردار کر دیا

اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ بڑھتے وبائی امراض اور غذائی قلت پاکستان میں سیلاب سے زیادہ خطرناک ثابت ہو سکتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق عالمی ادارۂ صحت کے بعد اب اقوام متحدہ نے بھی پاکستان میں سیلاب کے بعد دیگر آفات سے خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ممکنہ طور پر غذائی قلت سیلاب سے زیادہ مہلک ثابت ہو سکتی ہے۔

رپورٹس کے مطابق اقوام متحدہ کے انسانی ہمدردی کے کوآرڈینیٹر جولین ہارنیس نے خبردار کیا ہے کہ سیلاب کے بعد پاکستان کو مزید آفات کا سامنا ہو سکتا ہے۔

سیلاب متاثرہ علاقوں میں ڈینگی، ملیریا، ہیضہ اور اسہال جیسی بیماریوں کے ساتھ غذائی قلت کی وجہ سے ہونے والی اموات سیلاب سے ہونے والی ہلاکتوں سے کہیں زیادہ ہوں گی۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ ہماری اولین ترجیح صحت کے اس بحران سے نمٹنا ہے جو سیلاب سے متاثرہ اضلاع میں زور پکڑ رہا ہے۔

Advertisement

واضح رہے کہ پاکستان میں  وبائی امراض پھوٹ پڑے ہیں تاہم سیلاب کے باعث صحت کا نظام یہ بوجھ اُٹھانے کے قابل نہیں رہا ہے۔

تاہم اب تک پاکستان میں سیلاب سے مجموعی ہلاکتیں 1600 سے زائد ہیں جب کہ 70 لاکھ سے زائد افراد بے گھر ہوئے اور کھلے آسمان تلے رہنے پر مجبور ہیں۔

متاثرین کو پینے کا صاف پانی، ادویات اور خوراک کی کمی کا سامنا ہے۔

Advertisement

اپنی رائے کا اظہار کریں