صائمہ ہمایوں کی ”خاموش سسکیاں “ایک منفرد کتاب تبصرہ نگار :اقراءنور میواتی

معاشرے کی دبی ہوئی خاموش سسکیوں کی صدائیں

20

معاشرے کی دبی ہوئی خاموش سسکیوں کی صدائیں پر مشتمل کتاب ”خاموش سسکیاں “زیر مطالعہ ہے جو کہ مصنفہ میری عزیزہ بہن صائمہ ہمایوں کی ہے ۔اول تو اتنی بہترین کتاب کی اشاعت پر انھیں دل کی اتھاہ گہرائیوں سے ڈھیروں ساری مبارک باد

صائمہ ہمایوں سے میرا تعلق بہت گہرا اور تقریبا دوسال سے ہے انکی اکثر تحریریں اشاعت سے قبل ہی میری نذر ہوجاتی ہیں کیونکہ انکی پروف ریڈنگ میں ہی ہوں .

ماشاءاللہ موصوفہ اپنے سادہ اسلوب میں الفاظ کو یکتا موتیوں کی مالا پہناناجانتی ہیں انکی کہانیاں معاشرے کی مکمل عکاسی کرتی ہیں اور حقیقت کے بالکل قریب ہوتی ہیں آپ کی کہانیاں ہر عمر کے فرد کو اپنی طرف متوجہ کرتی ہیں اور آپ کی اس کتاب میں بھی تمام تر کہانیاں دلچسپ اور متاثر کن ہیں جو ایک حقیقت پر مبنی ہیں .

بالخصوص ” مجرم کون “نے رلاکر رکھ دیا سچ ہی کہا کہ عورت بدلہ لینے پر آجائے تو سانپ سے بھی بدتر بن جاتی ۔۔شیطانیت بھی عورت کے اس روپ سے پناہ مانگتی ہے اللہ ایسی گھٹیا عورت کے شر سے ہم سب کو محفوظ رکھے ۔۔۔سچ رلادیا اس سچ بیانی نے۔

 

محافظ لیٹرا۔ آہ۔۔۔آہ یہ کہانی بھی رلا گئی ۔۔میں اسکو عزت کا محافظ سمجھتی ہی نہیں جسے خود رب نے نامحرم قرار دیا ۔۔۔وہ کیسے محافظ بن سکتا ہے

بس یہ ہماری بدنصيبی کہ ہم اس اونچ نیچ میں اسلامی قوانین بھول جاتے ہیں۔تبھی یہ درندہ اپنے درندے پن کو ظاہر کرتا ہے۔۔عورت اپنے اندر واقعی ہزاروں راز صرف اسلیے سمو لیتی ہے کہ اسکا گھر قائم رہے اور یہ راز اسے اندر سے کھوکھلا کردیتا ہے۔

 

گمنام مجاہد ،لاحاصل جنت مختصر مگر پراثر تھیں
۔۔۔منگول آگئے ۔۔ منگول کانام ذہن میں آتے ہی انکی درندگی کے واقعات دماغی سکرین پر نمودار ہوجاتے ہیں دنیا میں ان جیسی ظالم اور درندہ صفت قوم نہ سنی نہ دیکھی۔ چنگیز خان و ہلاکوخان ظلم وبربریت کے ظالم ترین حکمران تھے ۔

 

دیگر کہانیاں بھی بہت زبردست ہیں ۔۔۔
واقعی کتاب کا نام ”خاموش سسکیاں “مکمل کتاب کا احاطہ کرتا ہے ۔۔

دعا ہے اللہ رب العزت اس کتاب کو مقبولیت عامہ عطافرمائے آمین ثمہ آمین
کتاب خریدیں تاکہ مصنفہ کی حوصلہ آفزائی ہو ۔شکریہ

ایک تبصرہ چھوڑ دو