متحدہ عرب امارات میں خاتون نے اپنے وکیل کے خلاف مقدمہ جیت لیا

ابوظبی کی عدالت نے خاتون کو 2 لاکھ درہم کا معاوضہ دلوا دیا

0 7

متحدہ عرب امارات کی تاریخ میں ایک انوکھے مقدمے کا فیصلہ سُنایا گیا ہے جس میں ایک وکیل کو اپنی خاتون موکلہ کو بھاری رقم بطور ہرجانہ ادا کرنے کا حکم سُنایا گیا ہے۔

 

خاتون نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے ایک مقدمے میں کسی وکیل کی خدمات حاصل کرنے کے لیے اسے بھاری رقم دی تھی۔ مگر اس وکیل نے اسے تمام عدالتی کارروائی کے دوران مایوس کیا۔

 

جس کی وجہ سے وہ اپنا مقدمہ بُری طرح ہار گئی۔ حالانکہ وہ اس مقدمے میں حق پر تھی۔ خاتون کا کہنا تھا کہ وکیل نے اس کے دعوے کو قانونی طور پر ٹھیک طرح سے فائل ہی نہیں کیا تھا

 

اور سماعت کے دوران بھی کئی ایسی غلطیاں کیں جن کے باعث وہ جیتا ہوا کیس ہار گئی۔ جس سے اُس کا نہ صرف بڑا مالی نقصان ہوا بلکہ اسے شدید ذہنی اذیت سے بھی گزرنا پڑا ہے۔

 

وہ اس سارے معاملے میں وکیل کو قصوروار سمجھتی ہے۔

 

وکیل نااہل ہونے کے باوجود اس سے مقدمے کی فیس کی آخری قسط کا بھی مطالبہ کر رہا ہے۔پرائمری عدالت نے خاتون کے دلائل سُننے کے بعد اس کے حق میں فیصلہ سُناتے ہوئے وکیل کو 2 لاکھ درہم کی رقم خاتون کو دینے کا حکم جاری کیا

 

اور ساتھ میں یہ بھی حکم سُنایا کہ وکیل کو اس کی غفلت کے باعث خاتون کی جانب سے فیس کی آخری قسط بھی وصول کرنے کی اجازت نہیں ہو گی۔

 

اس دوران وکیل کی جانب سے اُٹھائے گئے اعتراضات کو مسترد کر دیا گیا۔ وکیل نے یہ مقدمہ ہارنے کے بعد پہلے اپیلٹ کورٹ میں اپیل دائر کی مگر اسے مسترد کر دیا گیا۔

 

آخرکار پھر اس کی جانب سے سپریم کورٹ میں اپیل کی گئی مگر عدالت نے وہاں بھی اس کا دعویٰ مسترد کرتے ہوئے خاتون کے حق میں فیصلہ سُناتے ہوئے وکیل کو کہا کہ وہ خاتون کو جلد از جلد دو لاکھ روپے کی رقم ادا کرے۔

 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.