مہنگائی نے عام آدمی کے منہ سے نوالہ تک چھین لیا ہے۔ جماعت اسلامی پاکستان حلقہ خواتین

حکومت تمام تر وعدوں اور دعوؤں کے باوجو د مہنگائی اوربے روز گاری پر قابو پانے میں ناکام رہی۔

0 67

کراچی (سٹی ٹی وی پاکستان) مہنگائی نے عام آدمی کے منہ سے نوالہ تک چھین لیا ہے۔ حکومت تمام تر وعدوں اور دعوؤں کے باوجو د مہنگائی اوربے روز گاری پر قابو پانے میں ناکام رہی۔ جماعت اسلامی پاکستان حلقہ خواتین

جماعت اسلامی پاکستان حلقہ خواتین کے ناظمات صوبہ اور شعبہ جات کی نگرانات کے اجلاس میں ”ملک کی موجودہ صورتحال” کے عنوان سے قرار داد پیش کی گئی، قرار داد کے متن میں کہا گیا کہ وطن عزیز پاکستان دیگر ممالک کی طرح خطرناک وبا کی زد میں ہے۔ ایک طرف وبا تیزی کے ساتھ لوگوں کو ان کے عزیزوں کو چھین رہی ہے تو دوسری طرف غم اور خوف میں ڈوبے ہوئے لوگوں کو مہنگائی نے بے حال کر رہا ہے۔

 

حکومت کے وعدوں اور دعوؤں کے باوجود مہنگائی نے عام آدمی کے منہ سے نوالہ تک چھین لیا ہے۔سٹیٹ بنک کی رپورٹ کے مطابق 2020ء میں سب سے زیادہ مہنگائی پاکستان میں رہی۔ ان حالات میں پیش کئے جانے والے بجٹ میں بھی غریب عوام کے لئے کوئی ریلیف نہیں۔مہنگائی میں اضافہ ہوگا۔آٹے اور چینی کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا ہے۔جوکہ بنیادی ضروریات میں شامل ہیں۔حکومت تمام تر وعدوں اور دعوؤں کے باوجو د مہنگائی اوربے روز گاری پر قابو پانے میں ناکام رہی۔سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہ کرنا لمحہ فکریہ ہے۔

 

دوسری طرف حکومت نے کرونا کے نام پر اربوں ڈالر اکھٹے کر لئے مگر اس وبا سے متاثرہ افراد کی صحت کی بحالی اور علاج کے لئے ہسپتالوں میں مناسب بندوبست نہیں ہے جہاں ڈاکٹروں کو صحت کا تحفظ حاصل نہ ہو،وہاں مریضوں کا پرسان حال کون ہوگا۔عوام کوعلاج کی سہولیات مہیا کرناحکومت کی ذمہ داری ہے۔ کنفیوژڈ حکومتی پالیسی کی وجہ سے کرونا میں اضافہ ہوا ہے۔ کرونا وباء کے دوران ڈاکٹروں نے فرنٹ لائن فائٹرز کا کردار اد ا کیا۔حکومت کو ڈاکٹروں کیلئے اضافی تنخواہ اور سپیشل الاؤنس کا اعلان کرنا چاہئے تھا۔ہسپتالوں میں ویلٹی نیٹرز کی تعداد نہ ہونے کے برابر ہے۔اگر وبا سے نمٹنے کے لئے خاطر خواہ انتظامات کیے جاتے تو آج ملک میں افراتفری کا عالم نہ ہوتا۔بجٹ میں تعلیم اور صحت کے لئے بہت کم رقم مختص کی گئی ہے۔

 

قرار داد میں حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت غیر ترقیاتی اخراجات کم اورزبوں حالی کا شکار تعلیم اور صحت کے شعبوں کو سنبھالا دینے کی کوشش کرے، حکومت کورونا ٹیسٹ مفت، پرائیویٹ لیبارٹریوں کو ٹیسٹ فیس، ہسپتالوں کو علاج کیلئے فنڈز مہیا کرے، بجٹ میں تعلیم اور صحت کیلئے زیادہ سے زیادہ فنڈز مختص کرے، موجودہ حالات میں مہنگائی کنٹرول کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے، بنیادی ضروریات آٹا،چینی اور ادوایات کی قیمتوں کو کم کیا جائے اور قیمتوں میں استحکام کیلئے حکومت چیک سسٹم لائے، بے لاگ احتسابی عمل کو فوری طور پر نافذ کیا جائے، ملک و قوم کو درپیش تمام مسائل کا حل اسلامی نظام کے نفاذ میں ہے۔ اجلاس کے شرکا ء نے ہاتھ اٹھا کر قرار داد کو منظور کیا۔

 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.