اچھی صحت کیلئے رہنما اصول ! تحریر: حکیم احمدحسین اتحادی

ہم ان اصول پر عمل کرکے صحت وتندرستی والی زندگی گزارسکتے ہیں

0 94

تندرستی ہزارنعمت ہے صحت مندجسم صحت منددماغ ہوتا ہے اس لئے اچھی صحت کے لئے درج ذیل ہدایات اورپرہیزپرعمل کیجئے اوربیماریوں سے دوررہیں اورصحت مندوتوانازندگی گزاریں۔ اچھی صحت کے لئے حیوانات سے حاصل ہونے والی اشیا ء کم سے کم استعمال کریں۔ چربی لگا گوشت بہت کم کھائیں۔ دخانی عمل سے پکائی ہوئی غذا /فاسٹ فوڈبالکل نہ کھائیں۔ یادرکھیں کہ لحمیات کا زیادہ استعمال صحت کے لئے مضر ہے۔ روزانہ ایک پیالہ دہی کا استعمال صحت کے لئے بہت مفید ہے دہی کی لسی استعمال کریں۔ زیادہ ٹھنڈے مشروبات نہ پئیں۔

 

 

پھل اور ترکاریاں ہمیشہ تازہ استعمال کریں۔ کھانے سے پہلے انہیں اچھی طرح دھولیں۔ المونیم سے بنے ہوئے برتنوں میں کھانا ہرگز نہ پکائیں۔ غذا میں لہسن اور پیاز کا استعمال زیادہ سے زیادہ کریں۔ لہسن اورپیازبہترین قدرتی اینٹی بائیوٹک ہیں جوامراض سے بچاتے ہیں۔ کھاناکھانے کے دوران مختلف نوعیت کی غذاؤں کو مکس کرکے نہ کھائیں۔ پہلے ایک قسم کا کھانا کھالیں پھر دوسری قسم کے کھانے کو کھائیں۔ ایک دن میں دووقت ایک ناشتہ(سحری) اور نماز مغرب کے بعد کھانااچھی صحت کے لئے بہترین اصول ہے۔ حیاتین بی 17 کی حامل غذاؤں مثلاالسی،انناس،لیموں،شلجم،چقندر،،سیب،آڑو،انگور،تربوز،اسٹابری،چیری،خوبانی،شہتوت،جامن،پیلی شملہ مرچ،ناشپاتی،پیلاآلو،پیلے ٹماٹر،مکئی، کو کھانے میں ضرور شریک کریں یہ غذائیں قوت مدافعت کوبڑھاتی ہیں اورکینسرسے بچاتی ہیں

 

 

اس کے علاوہ کروناوائرس کے مقابل جسم کے مدافعتی نظام یعنی امیون سسٹم کو مضبوط بناتی ہیں۔ خوبانی کے بیج (مغز)میں کثیرمقدارمیں وٹامن بی 17پایاجاتا ہے۔ تمام پیلی سبزیاں اورپھل وٹامن بی 17کاخزانہ ہیں اسی طرح اگر آپ کے معالج نے کوئی حیاتین تجویز کی ہو تو اسے غذا میں شامل کرنا نہ بھولیں۔ وٹامن بی 17کینسرکاخاتمہ کرتا ہے اوروبائی امراض میں سب سے تیزاثر ہوتاہے۔ چائے اور کافی دونوں کا استعمال مضر صحت ہے لیکن اگر مجبوری ہو تو کافی کی بجائے خالص دودھ کی چائے پئیں۔ مرچوں اور رائی کے زیادہ استعمال سے پرہیز کریں۔ مصنوعی طریقہ سے تیار کردہ خوشبویات،باڈی سپرے، کریمیں اور پالش وغیرہ جسم پر لگانے سے پرہیز کریں۔ ایسی کیمیائی اشیاء کو اپنے قریب نہ رکھیں جو پینٹ یا پالش کو پتلا کرنے یا مختلف قسم کے دھبوں کو صاف کرنے کے لئے استعمال کی جاتی ہیں۔

 

 

 

تمباکو کا کسی بھی شکل میں استعمال نہ کریں۔ سگریٹ پیتے ہوئے لوگوں سے دور رہنے کی کوشش کریں کیونکہ اس کا دھواں آپ کے لئے بھی اتنا ہی نقصان دہ ہوگا جتنا کہ سگریٹ پینے والے کے لئے مضرصحت ہوتاہے۔ ہمیشہ ابلا ہوا نیم گرم پانی پیجئے صبح کے وقت نہارمنہ نیم گرم پانی معدہ انتڑیوں کی صفائی،شوگر،جگرکے امراض اورخواتین کے وزن کوکم کرنے کے علاوہ پیریڈکی خرابی کودورکرتاہے۔ روزانہ چہل قدمی کریں اور جب بھی ممکن ہو پندرہ بیس منٹ ورزش کریں۔ ان غذاؤں کے استعمال سے اجتناب کریں جن کی تیاری میں مصنوعی رنگ/فوڈکلر استعمال کئے گئے ہوں۔

 

 

اپناوزن کم کریں۔ موٹاپا امراض دل،شوگر اور سرطان کا معاون ہوسکتا ہے۔ سالانہ طبی معائنہ ضرور کروائیں۔ اپنے آپ کو خوش رکھنے کی کوشش کریں۔ اپنی سوچ کو مثبت بنائیں مختلف قسم کے ذہنی دباؤ یا تناؤ کی کیفیات سے آزاد رہنے کی کوشش کریں۔ مختلف قسم کی ترکاریوں کے تازہ تازہ نکالے ہوئے جوس زیادہ مقدار میں پیئے جائیں، مثلاً گاجر اور چقندر وغیرہ۔ ہم ان اصول پر عمل کرکے صحت وتندرستی والی زندگی گزارسکتے ہیں۔

 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.