ابھی بھی وقت ہے ! ( بے اختیار ) تحریر: عمر فاروق ناز گوجرانولہ

خیر اور شر کی جنگ ہمیشہ سے ہی چلی آرہی ہے ،

0 153

وقت ہمیشہ کروٹیں بدلتا رہتا ہے اس کو وہی لوگ عبور کرتے ہیں جو ہمیشہ قدرت کے ساتھ رابطے میں رہتے ہیں اور قانون قدرت بھی ہے کہ وہ انسان کا امتحان بھی ضرور لیتی ہے تاکہ اس کے بندے اس سے رابطے میں رہیں ، جب سے دنیا بنی ہے تب سے لے کر آج تک جتنی بھی قومیں اس کرہ ارض پر آئی ہیں ہر پر کڑا وقت بھی آیا جس نے اپنے رب رحمان سے رابطہ رکھا اس سے ڈرتے رہے

 

دنیا میں بھی کامیاب رہے اور آخرت میں بھی ان کے لیے اعلیٰ بلند درجات ہیں اور جو لوگ رب تعالیٰ کے نافرمان اور باغی رہے ان کی دنیا بھی تباہ ہوئی اور آخرت میں بھی ان کا کوئی حصہ نہیں ، دجالی فتنہ نے ہر دور میں سر اٹھایا ہے رب رحمان نے بھی ان کو قیامت تک مہلت دے رکھی ہے ، اس وقت پوری دنیا میں یہودو نصاری نے اپنے مذموم عزائم سے مسلم امہ کو دوچار کیا ہوا ہے اور ہر وقت اپنے شیطانی منصوبوں سے مرغوب کرنے میں لگے ہوئے ہیں اور ان کے پراپیگنڈے ہمیشہ سے ہی مسلمانوں کے خلاف رہے ہیں خیر اور شر کی جنگ ہمیشہ سے ہی چلی آرہی ہے ،

 

اس وقت اسرائیل ، امریکہ ، انڈیا ، اندرون خانہ اتحادی بنے ہوئے ہیں اور اپنے مضموم عزائم کو مل کر سر انجام دے رہے ہیں اور کسی حد تک کامیاب بھی ہوئے ہیں ان کا اصل ٹارگٹ پاکستان ہے کیونکہ کہ پاکستان ایسا ملک ہے جو ایٹمی طاقت کے ساتھ ساتھ ایشیا کا سب سے مضبوط اور کامیاب قلعہ کے طور پر موجود ہے الحمدللہ اور ایشیا کی سونے کی چڑیا ہے ، کافروں کا اتحاد آہستہ آہستہ پاکستان کی طرف بڑھ رہا ہے وہ پہلے عراق شام اور افغانستان میں اپنا زور آزما چکا ہے اسے صرف افغانستان میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے اور اس دجالی اتحاد کا اصل ٹارگٹ پاکستان ہے وہ ان ملکوں کو فتح کرکے پاکستان پر اپنی حکمرانی دکھانا چاہتا ہے تاکہ پوری دنیا میں اس کی حکمرانی ہو ،

 

اس دجالی ملکوں کے اتحاد نے اپنے وسائل اور دولت کے بل بوتے پر مسلم ممالک کو بھی خریدنے کی کوشش کی گئی اور پھر اسے منصوبہ بندی سے تباہ کیا ، آج بھی وہی تاریخ دہرانے کی کوشش میں ہیں اور ناکامی کی صورت میں سنگین نتائج کی دھمکیاں دیتے ہیں ، آئیے تھوڑا سا تاریخ کے جھروکوں میں جھانکتے ہیں زولفقار علی بھٹو کے دور میں یہودی نژاد امریکی سفیر ہنری کسنجر نے لاہور ایئرپورٹ پر بھٹو کو مخاطب کرتے ہوئے کہا تھا کہ ایٹمی پروگرام ترک کردو ورنہ نشان عبرت بنا دیں گے

 

میاں نواز شریف کے دور میں سابق امریکی صدر بل کلنٹن نے پاکستان کے ایٹمی دھماکوں سے قبل نواز شریف کو کہا کہ اگر انہوں نے ایٹمی دھماکہ کیا تو اقتدار سے محروم ہونا پڑے گا تاریخ کے متذکرہ بالا شواہد اس بات کی دلالت کرتے ہیں کہ پاکستانی قوم یا حکومت جس حد تک بھی امریکی عزائم کے سامنے سر نڈر کرتی ہے یا کرتی جائے گی اسکی طرف سے دباؤ بڑھتا ہی چلا جائے گا ، ابھی بھی وقت ہے ہم سب اپنے اپنے اختلافات ختم کرکے ایک ہوجائیں اور اپنے دشمن عناصر کو کھلا پیغام سنا دیں کہ ہم اپنے ارض وطن کے لیے ہر وہ اقدامات کریں گے جس سے اس پاک دھرتی پر کوئی آنچ نہ آئے ،

 

آخر میں میں صرف یہی کہوں گا کہ اب دوٹوک فیصلوں کا وقت آگیا ہے خالی دعووں سے اب کام نہیں چلے گا ابھی بھی وقت ہے قدرت بڑی رحیم و کریم ہے واپس پلٹ آئیں ،
افسوس صد افسوس شاہیں نہ بنا تو
دیکھے نہ تیری آنکھ نے فطرت کے اشارات
تقدیر کے قاضی کا فتویٰ ہے ازل سے
ہے جرم ضعیفی کی سزا مرگِ مفاجات

 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.