کورونا وباء کے شدید بیمار مریضوں کیلئے ممکنہ طریقہ علاج دریافت ہوگیا

جوڑوں کے درد کی دوا ’ٹوکلیزوماب‘ کورونا وائرس کے شدید بیمار مریضوں کے علاج میں بھی انتہائی موثر ثابت ہو سکتی ہے، لندن میں ہوئی ایک تحقیق کے نتائج سامنے آگئے

0 13

عالمی وباء کورونا وائرس کے باعث شدید بیمار افراد کے لیے ممکنہ طریقہ علاج دریافت کرلیا گیا ۔  اس حوالے سے ایک نئی تحقیق منظر عام پر آئی ہے

 

کہ کورونا وائرس کے ایسے مریض جو کہ انتہائی نگہداشت میں ہیں ان کے علاج کے لیے جوڑوں کے درد کی دوا موثر ثابت ہو سکتی ہے۔

 

لندن کے ایمپیریل کالج کی ایک تحقیق کے ابتدائی نتائج میں بتایا گیا ہے کہ جوڑوں کے درد کی دوا ’ٹوکلیزوماب‘ جو قوت مدافعت کو بڑھانے میں معاون چابت ہوتی ہے

 

اور سوجن کو بھی کم کرنے میں مددگار ہوتی ہے ، یہی دوا کورونا وائرس کے شدید بیمار مریضوں کے علاج میں بھی انتہائی موثر ثابت ہو سکتی ہے ، برطانوی حکومت کی طرف سے اسے ایک اچھی خبر توا قرار دیا گیا ہے

 

تاہم تاحال اس تحقیق کے مزید نتائج ابھی تک شائع نہیں ہوئے جب کہ ماہرین صحت کے ذریعے اس کی مزید جانچ بھی کی جائے گا۔

 

اس سلسلے میں ایمپیریل میں انیستھیزیا اور انتہائی نگہداشت کے چیئرمین پروفیسر انتھونی گوڈن کا کہنا ہے کہ تحقیق سے سامنے آنے والے ابتدائی نتائج بتاتے ہیں کہ یہ دوا انتہائی نگہداشت کے مراکز میں زیر علاج کورونا وائرس کے شدید بیمار مریضوں کے لیے انتہائی مفید ہے ،

 

جب ہمیں تمام شرکاء سے تحقیق کے نتائج مل جائیں گے تو اس کے بعد توقع ہے کہ ہمارے حاصل کردہ نتائج کورونا وائرس کے زیادہ بیمار مریضوں کے علاج کے لیے بہتر رہنمائی فراہم کر سکیں گے۔

 

دوسری طرف پاکستانی ماہرین صحت کی بہت بڑی کامیابی، کرونا کےعلاج کی دوا تیار کر لی ، میڈیا رپورٹس میں فراہم کردہ تفصیلات کے مطابق پاکستانی ماہرین صحت نے مہلک عالمی وبا کرونا وائرس کے علاج کی دریافت کے سلسلے میں بڑی کامیابی حاصل کی ہے ،

 

پاکستانی ماہرین صحت ایسی دوا تیار کرنے میں کامیاب ہوگئے جس کی مدد سے کرونا مریضوں کی حالت سنبھل گئی ، تیار کردہ دوا کے پری کلینیکل اور کلینکل ٹرائل کے دوران حوصلہ افزاء نتائج سامنے آئے۔

 

بتایا گیا ہے کہ کلینکل ٹرائل میں دوا کی حیران کن کامیابی دیکھنے میں آئی۔ اس دوا کے استعمال سے 95 فیصد بزرگ کرونا مریض وینٹی لیٹر پر جانے سے پہلے صحتیاب ہوگئے۔

 

جبکہ جو کرونا مریض وینٹی لیٹر پر موجود تھے، ان کی 60 فیصد تعداد کی حالت اس دوا کے استعمال سے سنبھل گئی، امکان ہے کہ رواں ماہ کے دوران ہی دوا کی تیاری اور دستیابی کے حوالے سے باقاعدہ اعلان کیا جائے گا۔

 

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.