لانگ مارچ اور دھرنا اسلام آباد میں ہی ہو گا اور وہیں ہو گا جہاں عمران خان نے دھرنا دیا تھا

مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما رانا ثناء اللہ نے اسلام آباد میں دھرنے سے متعلق اعلان کر دیا

0 6

 مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنما رانا ثناء اللہ نے کہا کہ پی ڈی ایم اسلام آباد میں پارلیمنٹ کے سامنے ڈی چوک پر دھرنا دے گی۔ دھرنے کی جگہ یہی ہے۔ اور یہ اسی حکومت نے مقرر کی ہے۔ لانگ مارچ جب بھی ہو گا وہ ڈی چوک میں ہی ہو گا۔ ڈی چوک پر جو دھرنا ہو گا اُس دھرنے میں پورے پاکستان سے اور تمام مکاتب فکر سے، ہر سرکاری ادارے سے بھی لوگ آ کر اس میں حصہ لیں گے۔

دھرنے میں حصہ لینے والوں میں کسان اور مزدور بھی شامل ہوں گے ، اس کے علاوہ اور بھی مسائل کا شکار لوگ اس دھرنے کا حصہ ہوں گے ۔ رانا ثناء اللہ نے کہا کہ یہ دھرنا اُس وقت تک جاری رہے گا جب تک ہمیں اس حکومت سے نجات نہیں مل جاتی۔

انہوں نے مزید کیا کہا آپ بھی دیکھیں:

یاد رہے کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کا حکومت مخالف احتجاجی تحریک چلانے کا سلسلہ تاحال جاری ہے۔

پی ڈی ایم کے صدر مولانا فضل الرحمان نے حکومت سے مطالبہ کر رکھا ہے کہ وہ 31 جنوری تک مستعفی ہو جائے اور اگر حکومت مستعفی نہیں ہوتی تو یکم فروری کو پی ڈی ایم کے سربراہی اجلاس میں اسلام آباد کی طرف مارچ کی تاریخ کا اعلان کیا جائے گا۔ جبکہ دوسری جانب پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ نے 19 جنوری کو الیکشن کمیشن کے سامنے دھرنے کا اعلان بھی کر رکھا ہے۔

اس حوالے سے پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا تھا کہ انیس جنوری کو فارن فنڈنگ کیس کے خلاف الیکشن کمیشن کے سامنے مظاہرہ کیا جائے گا۔ ایک طرف پی ڈی ایم نے حکومت کو اکتیس جنوری تک مستعفی ہونے کی ڈیڈ لائن دے رکھی ہے جبکہ دوسری جانب حکومتی حلقوں کا کہنا ہے کہ اگر پی ڈی ایم اسلام آباد کی جانب لانگ مارچ کرے گی تو ان کی تواضع کی جائے گی ، مزید یہ کہ ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے بھی اپنی حالیہ پریس کانفرنس میں پی ڈی ایم کے لانگ مارچ اور پنڈی آنے کے حوالے سے کہا کہ مولانا پنڈی آئیں ، انہیں چائے پلائیں گے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.